Hr parishani ka hal

ہر مسئلے پریشانی کا حل – دل مطمئن نہ ہو تو پیسے واپس

اعوذ باللّٰہ من الشیطٰن الرجیم
بسم اللّٰہ الرحمن الرحیم
کچھ روز سے حضور صلی اللہ علیہ وسلم پر وحی نازل نہیں ھو رھی تھی ،
حضور صلی اللہ علیہ وسلم شدید بے چینی محسوس کر رھے تھے ،
ادھر کفار کے ہاتھ ایک موقع آگیا تھا تمسخر کیلیئے
اب وہ تجھ پر کیوں اپنی وحی نازل نہیں کرتا؟
حضور صلی اللہ علیہ وسلم پر یہ الفاظ بجلی بن کر گرتے
آپ شدید کبیدہ دل ھو چکے تھے ،
لیکن وحی تھی کہ نازل ھی نہیں ھو رھی تھی۔
آپ شدید دعائیں مانگ رھے تھے ،
آپ کا خیال تھا کہ شاید اللہ آپ سے ناراض ھو گیا ھے
آپ شدید معافیاں مانگ رھے تھے
اللہ سے وحی کی طلب فرمارھے تھے
لیکن
آپ کا انتظار طویل ھوتا جارھا تھا
آپ بیمار ھوگئے تھے
بیماری کے سبب رات کا قیام بھی مشکل ھو چلا تھا
ایسا محسوس ھوتا تھا جیسے دنیا میں کچھ باقی نہ بچا ھو۔
سب کچھ بے مقصد و بے معنیٰ ھو چکا ھو۔
آپ صلی اللہ علیہ وسلم کفار کے طعنوں سے کیا کم غمگین تھے
کہ اللہ عزوجل کی طرف سے بھی کوئی جواب نہ آتا تھا۔
امیدیں دم توڑتی نظر آ رھی تھیں
ایسے میں حضرت جبرائیل علیہ السلام اترتے ھیں ، اللہ عزوجل کا پیغام لے کر:“
قسم ھے ، دھوپ چڑھتے وقت کی۔ قسم ھے رات کی جب وہ چھا جائے۔ نہ ھی آپ کے رب نے آپ کو چھوڑا اور نہ ھی دشمنی اختیار کی۔ اور آپ کا آنے والا دور آپ کے گزرے ھوئے دور سے بہتر ھوگا۔ اور عنقریب آپ کا رب آپ کو اتنا کچھ عطا فرمائے گا کہ آپ خوش ھو جائینگے۔
سورہ ضحی آیۃ 1 تا 5
ان آیات میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم کو نہایت پیار سے اور قسم کی تاکید کے ساتھ تسلی دی گئی۔
کہ آپ کبیدہ دل نہ ھوں آپ کے رب نے آپ کو ھرگز فراموش نہیں کیا۔
ھمارے حضرت فرماتے تھے کہ اگرچہ یہ آیات نازل تو حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے دور کی اس مخصوص حالت پر ھوئیں ، لیکن یہ آیات ھر انسان اپنے بارے میں سوچ سکتا ھے ،
ھر انسان کے اوپر ایسا وقت آتا ھے جب وہ سوچنے لگتا ھے کہ اسے اس کے اللہ نے چھوڑ دیا ھے ، وہ اسکی دعائیں نہیں سن رھا ، جب انسان کال ملا رھا ھوتا ھے ، لیکن دوسری طرف سے کوئی رسپانس نہیں آ رھا ھوتا ، تب انسان شدید کبیدگی محسوس کرتا ھے ، بے چینی انتہا پر پہنچ جاتی ھے۔
لیکن انسان کو سمجھ لینا چاہیئےکہ اس کا رب اس سے غافل نہیں ھے ، بلکہ وہ اس کی ساری دعائیں ، گریہ و زاری سن رھا ھے ، اس کی بے چینی دیکھ رھا ھے ۔ اور عنقریب اس کو اتنا کچھ عطا فرمائیگا کہ وہ خوش ھو جائینگے

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.