shirk 97979e

شرک صرف بت پرستی کا نام نہیں

آپ گاڑی چلا رہے ہیں اور سیٹ بیلٹ نہیں باندھی، سامنے پولیس والا نظر آتا ہے تو آپ فوراً سیٹ بیلٹ باندھ لیتے ہیں،

آپ ڈرائیونگ کرتے وقت موبائل پر باتیں کررہے ہیں، اتنے میں آپ پولیس والے کو دیکھتے ہیں اور موبائل نیچے کرلیتے ہیں تاکہ وہ کہیں روک نہ لے،

آپ دفتر میں بیٹھے فیس بک استعمال کررہے ہیں، آپ کا باس وہاں آجاتا ہے اور آپ فوراً ونڈو کلوز کردیتے ہیں،

آپ کے اندر جنسی خواہش بیدار ہوتی ہے، آپ کی شادی نہیں ہوئی یا بیوی موجود نہیں اور آپ اپنے نفس کی تسکین کیلئے حرام کاری کا راستہ اختیار کرتے ہیں،

آپ کو پیسوں کی ضرورت ہے، آپ اس مقصد کیلئے رشوت لینا شروع کردیں یا ناپ تول میں کمی شروع کردیں،

اگر آپ ان میں سے کوئی ایک کام بھی کرتے ہیں تو سمجھ جائیں کہ آپ شرک میں ملوث ہیں۔

شرک صرف بت پرستی کا نام نہیں بلکہ شرک کا مطلب یہ ہے کہ آپ اللہ کے علاوہ کسی غیراللہ کے تابع ہو کر اللہ کے احکامات کی خلاف ورزی کرنا شروع کردیں۔

آپ کا انٹرویو ہے، آپ بھرپور تیاری کرتے ہیں، بہترین لباس زیب تن کرتے ہیں اور دوران انٹرویو سامنے والے کو امپریس کرنے کی کوشش کرتے ہیں، لیکن روزمرہ زندگی میں، یا کبھی نماز کی ادائیگی میں آپ نے اللہ کو خوش کرنے کا کوئی اہتمام نہیں کیا تو سمجھ جائیں کہ آپ شرک میں ملوث ہیں۔

آپ بیماری میں مبتلا ہوتے ہیں اور بجائے یہ کہ پہلے اللہ سے شفا مانگیں، پھر ڈاکٹر سے رجوع کریں، آپ سیدھا ڈاکٹر کے پاس چلے جائیں تو یہ بھی شرک کی ہی ایک قسم ہے۔

آپ کسی وزیر کے ہاں دعوت میں موجود ہیں، کھانے کے دوران نماز کا وقت آگیا لیکن چونکہ وزیر وغیرہ وہیں بیٹھے ہیں، آپ نے بھی نشست چھوڑ کر جانا مناسب نہ سمجھا تو یہ بھی شرک ہے۔

یہ تمام ایسے کام ہیں جو ہم میں سے ہر کوئی ہر وقت کرتا ہے لیکن احساس تک نہیں ہوتا کہ ہم اللہ تعالی کو ناراض کرکے غیراللہ کی خوشنودی حاصل کرنے کی بے کار مشق کررہے ہیں۔

ایک بات ذہن نشین رہے کہ قیامت کے دن نبی ﷺ کی شفاعت کی اگر امید ہے تو صرف گناہ صغیرہ کے حوالے سے۔ میری ناقص عقل کے مطابق نبی کریم ﷺ کسی مشرک کیلئے اللہ سے دعا نہیں فرمائیں گے کیونکہ ایسا کرنا کسی نبی کی شان کے خلاف ہے۔

بہتر ہوگا کہ اپنے رویوں میں تبدیلی لانا شروع کریں۔ جتنی عزت، جتنا ڈر آپ کو اپنے مینیجر، منسٹر، پولیس والے یا کسٹمر سے لگتا ہے، اس سے زیادہ ڈر اور خوف آپ کو اللہ سے ہونا چاہیئے وگرنہ یہ شرک کے زمرے میں آئے گا۔

مشرک کے ساتھ اللہ تعالی کو کوئی ہمدردی نہیں۔ یہ بہت بڑا ظلم ہے جو ہم اپنی جانوں کے ساتھ کریں گے۔ ڈر اور خوف صرف اللہ کا، دنیاوی فوائد کی نہ تو کوئی حیثیت ہے اور نہ اوقات!

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.